×
You need to subscribe to view this content.
Click here to subscribe.
قومی آمدنی

ایک خاص مدت کے دوران ملک کے اندر پیدا ہونے والی اشیاء اور خدمات کی مجموعی رقم ہوتی ہے- یہ کسی قوم کی آمدنی کےعوامل (بشمول لیبر، سرمایہ، زمین اور کاروبار) کے ذریعے حاصل ہونے والی آمدنی یعنی اجرت، سود، کرایہ، منافع کا مجموعہ ہوتا ہے۔ قومی آمدنی کے مختلف تصورات ہیں جیسے جی ڈی پی، جی این پی، این این پی، پرسنل انکم، ڈسپوزایبل انکم، اور فی کس انکم جومعاشی سرگرمیوں کے حقائق کی وضاحت کرتے ہیں۔

قومی آمدنی
>این این آئی پر فی کس آمدنی XXX XXX
جی ڈی پی
>جی ڈی پی XXX XXX
>زراعت سے جی ڈی پی XXX XXX
>صنعت سے جی ڈی پی XXX XXX
>خدمات سے جی ڈی پی XXX XXX
>جی ڈی پی کی سالانہ ترقی کی شرح XXX XXX
جی ایس ٹی
>مجموعی مجموعہ XXX XXX
>ریٹرن فائل XXX XXX
عوامی سرمایہ کاری
>کل رسیدیں XXX XXX
>کل اخراجات XXX XXX
>مالی خسارہ XXX XXX
افراط زر

زر، اشیاء اور خدمات کی قیمتوں کی عمومی سطح میں اضافے کی پیمائش کرتا ہے۔۔ یہ پیسے کی قوت خرید کو ختم کر کے سب کو متاثر کرتا ہے، جس کے نتیجے میں معیشت کے اخراجات بڑھ جاتے ہیں جس کا سب سے برا اثرغریبوں پر پڑتا ہے- افراط زر کی شرح کی پیمائش یا تو ہول سیل پرائس انڈیکس (WPI) یا ریٹیل پرائس انڈیکس جسےعام طور پر کنزیومر پرائس انڈیکس (CPI) کے نام سے جانا جاتا ہے کے ذریعہ کی جاسکتی ہے -

افراط زر
>بنیادی مضامین XXX XXX
>غذائی اجنا س XXX XXX
>غیر غذائی اجنا س XXX XXX
>معد نیات XXX XXX
>خام پٹرولیم اور قدرتی گیس XXX XXX
>ایندھن اور پاور XXX XXX
صنعتی پیداوار کا انڈکس (آئی آئی پی)

ایک مقداری اشاریہ ہے، جس میں مواد کی پیداوار کا اظہار مادی لحاظ سے کیا جاتا ہے۔ موجودہ مہینے کے دوران پیدا ہونے والی اشیاء کی مقدار کا تقابل بنیادی سال میں اوسط ماہانہ پیداوار کے ساتھ کیا جائےگا۔ آئی آئی پی ایک جامع اشاریہ ہے جوصنعتی گروپوں کے شرح نمو کی پیمائش کرتا ہے جن کی درجہ بندی ( کان کنی، مینوفیکچرنگ، بجلی، بنیادی سامان، رآس المال اور متوسط مواد کے تحت کی گئی ہو -

سیکٹرل
>کا ن کنی XXX XXX
>منوفیکچرنگ XXX XXX
>بجلی XXX XXX
استعمال پر مبنی
>پرائمری سامان XXX XXX
>سرمایہ کاری کا سامان XXX XXX
>انٹرمیڈیٹ سامان XXX XXX
>انفراسٹرکچر / تعمیراتی سامان XXX XXX
> پائیدارصارفین XXX XXX
>غیرپائیدارصارفین XXX XXX
آٹھ بنیادی صنعتوں کا انڈ کس

در اصل پیداواری حجم کا ایک اشاریہ ہے۔ یہ آٹھ منتخب بنیادی صنعتوں میں پیداوار کی اجتماعی اورانفرادی کارکردگی کی پیمائش کرتا ہے۔ ہندوستانی معیشت کے آٹھ بنیادی شعبے کوئلہ، خام تیل، قدرتی گیس، ریفائنری مصنوعات، کھاد، اسٹیل، سیمنٹ اور بجلی ہیں۔ یہ مجموعی صنعتی کارکردگی اورمعیشت میں عام اقتصادی سرگرمیوں کے لیے ایک بہت ہی اہم اشاریہ ہے۔

آٹھ بنیادی صنعتوں کا انڈ کس
>کوئلہ XXX XXX
>خام تیل XXX XXX
>قدرتی گیس XXX XXX
>ریفائنری پروڈکٹ XXX XXX
>کھاد XXX XXX
>اسٹیل XXX XXX
>سمنٹ XXX XXX
>بجلی XXX XXX
بینکنگ اورسرمایہ کاری

بینکنگ ایک ایسی صنعت ہے جو کریڈٹ، نقد بھگتان اوردیگر مالیاتی لین دین کا انتظام کرتی ہے۔ بینک نظام میں، بینک رقم جمع کرنےاورنکالنے، طلب کرنے پررقم کی واپسی، بچت اور قرض کے بدلےمعقول منافع کمایا جاتا ہے۔ ای بینکنگ وہ طریقہ ہے جس میں صارف انٹرنیٹ کے ذریعے الیکٹرانک طورپر لین دین کرتا ہے۔ یہ ڈپازٹ اکاؤنٹس، آن لائن فنڈز ٹرانسفر، اے ٹی ایم، الیکٹرانک ڈیٹا اکے باہمی تبادلے وغیرہ کا انتظام کرتا ہے۔

بینکنگ کی کارکردگی
>جمع XXX XXX
>کریڈٹ XXX XXX
>سی ڈی کا تناسب XXX XXX
>آٹومیٹڈ ٹیلر مشین (اے ٹی ایم) XXX XXX
>پوائنٹس آف سیل (پ و س) XXX XXX
ڈیجیٹل لین دین
>موبائل بینکنگ ٹرانزیکشنز XXX XXX
>نیشنل الیکٹرانک فنڈ ٹرانسفر (این ای ایف ٹی) XXX XXX
>ریئل ٹائم گراس سیٹلمنٹ (آر ٹی جی ایس) XXX XXX
>اے ٹی ایمز/پ و س/آن لائن (ای-کام)/دیگر پر کریڈٹ کارڈز کا استعمال XXX XXX
>اے ٹی ایمز/پ و س/آن لائن (ای-کام)/دیگر پر ڈیبٹ کارڈز کا استعمال XXX XXX
بڑے شعبوں کی طرف سے مجموعی بینک کریڈٹ
>ٹوٹل گراس بینک کریڈٹ XXX XXX
>فوڈ کریڈٹ XXX XXX
>نان فوڈ کریڈٹ XXX XXX
>زراعت اور متعلقہ سرگرمیاں (نان فوڈ کریڈٹ) XXX XXX
>مائیکرو اور سمال میڈیم اینڈ لارج انڈسٹری (نان فوڈ کریڈٹ) XXX XXX
>خدمات (نان فوڈ کریڈٹ) XXX XXX
>ذاتی قرضے (نان فوڈ کریڈٹ) XXX XXX
منی اسٹاک کے اقدامات
>گردش میں کرنسی XXX XXX
>بینکوں کے ساتھ کیش آن ہینڈ XXX XXX
>عوام کے ساتھ کرنسی XXX XXX
پری پیڈ ادائیگی کے آلات (پی پی آئیز)
>ایم-والیٹ XXX XXX
>پی پی آئی کارڈز XXX XXX
>این پی سی آئی پر خوردہ ادائیگی XXX XXX
>فوری ادائیگی کی خدمت (آئی ایم پی ایس) XXX XXX
یونیفائیڈ پیمنٹس انٹرفیس (یو پی آئی)
>یو پی آئی XXX XXX
>بھیم XXX XXX
>یو ایس ایس ڈی 2.0 XXX XXX
>یو پی آئی کے علاوہ بھیم اور یو ایس ایس ڈی XXX XXX
بیرونی تجارت اور سرمایہ کاری

غیر ملکی تجارت قومی سرحدوں اورخطوں سے باہر ممالک کے درمیان سامان اور خدمات کا باہمی تبادلہ ہے۔ درآمد (اپنے ملک کی دوسرے ملکوں سے خریداری) اوربرآمد (اپنے ملک کی دیگرملکوں کوفروخت)غیر ملکی تجارت میں سامان اور خدمات کے باہمی تبادلہ کےدوکلیدی عنصر ہیں ۔ غیر ملکی سرمایہ کاری سے مراد کسی غیر ملکی سرمایہ کار کے ذریعہ گھریلو کمپنیوں اوراثاثوں میں غیرملکی سرمایہ کاری ہے۔

>درآمد XXX XXX
>تجارتی توازن XXX XXX
>ایف ڈی آئی کی اندرونی آمد XXX XXX
>این آر آئی سرمایہ کاری XXX XXX
>ایف پی آئی سرمایہ کاری XXX XXX
>فاریکس ریزرو XXX XXX
ادائیگی کا توازن (BoP)
>کریڈٹ XXX XXX
>ڈیبٹ XXX XXX
>نیٹ XXX XXX
شرح تبادلہ

وہ شرح ہے جس کی بنیاد پرایک کرنسی کو دوسری کرنسی میں تبدیل کیا جاتا ہے۔ یعنی تبادلے کی شرح کسی ملک کی کرنسی کی وہ قیمت ہے جس پر دوسرے ملک کی کرنسی کا تبادلہ کیا جاتا ہے۔ زر مبادلہ کی شرح یا تومتعین ہوتی ہے یا تیرتی ہوتی ہے۔ متعین تبادلے کا نرخ ملک کے مرکزی بینک طےکرتے ہیں جبکہ فلوٹنگ تبادلے کا نرخ مارکیٹ ڈیمانڈ اورسپلائی کے حساب سے ہوتا ہے۔

>روپیہ فی امریکی ڈالر XXX XXX
>روپیہ فی برطانوی پونڈ XXX XXX
>روپیہ فی یورو XXX XXX
>روپیہ فی جاپانی ین XXX XXX
سونے چاندی کی شرح

سونا، چاندی، یا دیگر قیمتی دھاتیں جوسلوں، ڈلوں، یا مخصوص سکوں کی شکل میں ہوتی ہیں اورجن کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ روایتی کرنسیوں کے مقابلےمیں زیادہ قدروقیمت کی ہوتی ہیں اور جس کی بدولت اسے حکومت اور نجی شہریوں دونوں کی طرف سے ہنگامی ضروریات کے لئے رکھا جاتا ہے۔ بلین کو عالمی منڈی میں تجارت کے لیے بھی استعمال کیا جاتا ہے تاکہ بائع اور مشتری کو قیمت میں کمی کے خطرات سے بچایا جا سکےجوحکومت کی حمایت یافتہ فیاٹ کرنسیوں کے ساتھ ہوسکتا ہے -

>چاندی XXX XXX
سرمایہ مارکیٹ

ایک ایسی منڈی ہے جہاں خریدار اور بیچنے والے مالیاتی سیکیوریٹیز جیسے بانڈز، اسٹاکس وغیرہ کی تجارت میں مشغول ہوتے ہیں۔ خرید و فروخت افراد یا اداروں کے ذریعے کی جاتی ہے۔ عام طور پر، یہ مارکیٹ زیادہ تر طویل مدتی سیکیورٹیز میں تجارت کرتی ہے۔ ہندوستان میں، اسٹاک ایکسچینج کی دو اہم مارکیٹیں ہیں: نیشنل اسٹاک ایکسچینج (NSE) اور بمبئی اسٹاک ایکسچینج (BSE)

سرمایہ مارکیٹ
>این ایس ای نفٹی XXX XXX
کمپنی

ایک فطری قانونی ادارہ ہےجس کی تشکیل ایسوسی ایشن اور لوگوں کےایک گروپ کے ذریعہ ایک مشترکہ مقصد کے حصول کے لیے کی جاتی ہے۔ یہ ادارہ تجارتی یا صنعتی ہو تا ہے۔ اراکین کے فیصلے کی بنیاد پر تین قسم کی کمپنیاں ہوتی ہیں پبلک کمپنی، پرائیویٹ کمپنی اور ایک شخص کی کمپنی۔

کمپنی
>بند کمپنیاں XXX XXX
جھوپڑی، چھوٹی اور متوسط صنعتیں رجسٹرڈ

یہ کاروباری ادارے بنیادی طور پر سامان اور اشیاء کی پیداوار، مینوفیکچرنگ، پروسیسنگ اور ان کےتحفظ میں مصروف ہیں۔ جھوپڑی، چھوٹی اور متوسط صنعتیں ہندوستانی معیشت کا ایک اہم شعبہ ہے جس نے ملک کی سماجی و اقتصادی ترقی میں بہت نمایاں کردارادا کیا ہے۔ یہ نہ صرف روزگار کے مواقع پیدا کرتا ہے بلکہ ملک کے پسماندہ اوردیہی علاقوں کی ترقی کے لیے بھی سرگرم عمل رہا ہے۔

ادیم رجسٹریشنز
>چھوٹا XXX XXX
>درمیانہ XXX XXX
>کل صنعتی آدھار XXX XXX
سیاحت

لوگوں کی اپنی عام رہائش گاہ سے دوسری جگہ (واپس آنے کی نیت سے) کم از کم 24 گھنٹےاور زیادہ سے زیادہ 6 ماہ کے لیے سیرو تفریح کے واحد مقصد سے نقل مکانی ہے -

سیاحت
>ای ٹورسٹ ویزا XXX XXX
>سیاحت کی رسیدیں XXX XXX
نقل و حمل

سے مراد لوگوں یا سامان کی ایک جگہ سے دوسری جگہ نقل و حرکت ہے۔ یہ دوری کی رکاوٹ کو دور کرتا ہے۔ نقل و حمل کے مختلف ذرائع ہیں جیسے سڑک، ریلوے، پانی، ہوائی اور پائپ لائن ٹرانسپورٹ -

ہوائی ٹریفک
>مسافروں کی نقل و حرکت XXX XXX
>مال برداری کی نقل و حرکت XXX XXX
بندرگاہیں
>بڑی سمندری بندرگاہوں پر ٹریفک کا انتظام XXX XXX
ریلویز
>بک شدہ مسافر XXX XXX
>آمدنی پیدا کرنے کا آغاز XXX XXX
>کل ٹریفک کی رسیدیں XXX XXX
ٹیلی کمیونیکیشن

دوردرازعلاقوں تک معلومات کی الیکٹرانک ترسیل کا ذریعہ ہیں۔ یہ معلومات صوتی ٹیلی فون کالز، ڈیٹا، ٹیکسٹ، تصاویر، یا ویڈیو کی شکل میں ہو سکتی ہیں۔ ٹیلی کمیونیکیشن خدمات کوئی کمیونیکیشن کمپنی فراہم کرتی ہے جس کی صوتی اورڈیٹا خدمات کا دائرہ کارایک وسیع وعریض علاقہ ہوتا ہے۔ اس میں فون سروسز (بشمول وائر لائن اور وائر لیس کے)، انٹرنیٹ، ٹیلی ویژن، اور کاروبار اور گھروں کے لیے نیٹ ورکنگ خدمات شامل ہیں۔

ٹیلی فون سبسکرائبرز
>مجموعی طور پر ٹیلی کثافت XXX XXX
براڈ بینڈ سبسکرائبرز
>وائر لائن سبسکرائبرز XXX XXX
>وائرلیس سبسکرائبرز XXX XXX
>کل براڈ بینڈ سبسکرائبرز XXX XXX
بھارت نیٹ
>GPs میں Wi-Fi ہاٹ اسپاٹ نصب ہے۔ XXX XXX
>ایف ٹی ٹی ایچ کنکشنز XXX XXX
>گہرا فائبر XXX XXX
>OFC رکھی گئی لمبائی XXX XXX
>گرام پنچایتیں جہاں OFC رکھی گئی ہیں۔ XXX XXX
>GPs کو براڈ بینڈ کنیکٹیویٹی فراہم کی گئی ہے۔ XXX XXX
بجلی کی پیداوار

بنیادی توانائی کے ذرائع سے بجلی پیدا کرنے کا عمل ہے۔ توانائی کے مختلف ذرائع جو استعمال میں ہیں:( 1) روایتی ذرائع جس میں کوئلہ اور لگنائٹ، بڑے ہائیڈرو بشمول پمپڈ اسٹوریج، ایٹمی اور قدرتی گیس شامل ہیں- ( 2) قابل تجدید توانائی کے ذرائع میں شمسی، ہوا، بایوماس، اسمال ہائیڈرو وغیرہ شامل ہیں۔ (3) نئی ٹیکنالوجیز میں گرڈ اسکیل بیٹری انرجی اسٹوریج سسٹم شامل ہیں۔

>تھرمل XXX XXX
>ایٹمی XXX XXX
>ہائیڈرو XXX XXX
>بھوٹان درآمد XXX XXX
قابل تجدید توانائی کی پیداوار
>ہوا XXX XXX
>شمسی XXX XXX
پلانٹ لوڈ فیکٹر (PLF)
>تھرمل XXX XXX
بجلی کی پیداوار
>ایٹمی XXX XXX
پٹرول کی قیمتیں

عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمتوں میں ہاتار چڑھاؤکے مدنظر ہندوستانی تیل کمپنیاں پٹرول اور ڈیزل کی خوردہ قیمتوں پرروزانہ نظر ثانی کرتی ہیں۔ مرکزی حکومت پٹرولیم مصنوعات کی پیداوار پر ٹیکس لگانے کی مجاز ہے، جب کہ ریاستوں کوبھی ان کی فروخت پر ٹیکس لگانے کا اختیار ہے۔

پیٹرولیم کی قیمتیں
پٹرول کے پرچون فروخت کی قیمت (آرایس پی) (روپے / لیٹر)
>دہلی XXX XXX
>مومبئی XXX XXX
>چنئی XXX XXX
>کولکتہ XXX XXX
ڈیزل کے پرچون فروخت کی قیمت (آرایس پی) (روپے / لیٹر)
>دہلی XXX XXX
>مومبئی XXX XXX
>چنئی XXX XXX
>کولکتہ XXX XXX
انشورنس

دو فریقین کے درمیان ایک قانونی معاہدہ ہے- بیمہ کمپنی (بیمہ کنندہ) اورفرد (بیمہ شدہ) کے درمیان جس میں انشورنس کمپنی بیمہ شدہ فرد کےادا کردہ پریمیم کے بدلے بیمہ شدہ شخص کو ہنگامی حالات کی وجہ سے ہونے والے مالی نقصانات کی تلافی کرنے کا وعدہ کرتی ہے۔ انشورنس کی دو قسمیں ہیں:( 1) لائف انشورنس اور( 2) جنرل انشورنس -

لائف انسورنس کے پہلے سال کا پریمیم
>پریمیم XXX XXX
>پالیسیاں / منصوبے XXX XXX
>گروپ اسکیم کے تحت کور کئے گئے لوگ XXX XXX
سماجی تحفظ

ان افراد کے تحفظ کے نظام کی نمائندگی کرتا ہے جنہیں ریاست کی طرف سے ایسے تحفظ (جیسے ریٹائرمنٹ، استعفیٰ، چھٹنی، موت، معذوری) کی ضرورت ہے - ایسی مجبوریاں جو معاشرے کے افراد کے کنٹرول سے باہر ہیں۔ سماجی تحفظ کی پالیسیوں کا مقصد ان حالات سے دوچار افراد کو درپیش خطرات کے اخراجات میں کمی کرنا یا ان کی اادائگی کا انتظام کرنا ہے-۔

ای پی ایف ممبران
>اراکین کی تعداد خارج ہو گئی۔ XXX XXX
>خارج ہونے والے اراکین کی تعداد جنہوں نے دوبارہ شمولیت اختیار کی اور دوبارہ رکنیت اختیار کی۔ XXX XXX
>نیٹ پے رول XXX XXX
ای ایس آئی ممبران
>نئے رجسٹرڈ ملازمین XXX XXX
>موجودہ ملازمین XXX XXX
این پی ایس سبسکرائبرز
>نئے سبسکرائبرز XXX XXX
>موجودہ سبسکرائبرز XXX XXX
منتخب خوراک اشیاء کی خوردہ قیمت

خوردہ قیمت وہ حتمی قیمت ہے جس پر کسی شے کو صارفین کو بیچا جاتا ہے وہ جوآخری صارف یا استعمال کنندہ ہوتے ہیں۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ وہ گاہک مصنوعات کو دوبارہ فروخت کرنے کے لیے نہیں خریدتے بلکہ اسے استعمال کرتے ہیں۔ خوردہ قیمت مینوفیکچرر کی قیمت اور تقسیم کار کی قیمت سے مختلف ہوتی ہے۔

چاول
>دہلی XXX XXX
>مہاراشٹر XXX XXX
چاول
>مغربی بنگال XXX XXX
>تمل ناڈو XXX XXX
گندم
>دہلی XXX XXX
>مہاراشٹر XXX XXX
>مغربی بنگال XXX XXX
>تمل ناڈو XXX XXX
تور/ارہر دال
>دہلی XXX XXX
>مہاراشٹر XXX XXX
>مغربی بنگال XXX XXX
>تمل ناڈو XXX XXX
مسور کی دال
>دہلی XXX XXX
>مہاراشٹر XXX XXX
>مغربی بنگال XXX XXX
>تمل ناڈو XXX XXX
شکر
>دہلی XXX XXX
>مہاراشٹر XXX XXX
>مغربی بنگال XXX XXX
>تمل ناڈو XXX XXX
سرسوں کا تیل (پیکڈ)
>دہلی XXX XXX
>مہاراشٹر XXX XXX
>مغربی بنگال XXX XXX
>تمل ناڈو XXX XXX
پیاز
>دہلی XXX XXX
>مہاراشٹر XXX XXX
>مغربی بنگال XXX XXX
>تمل ناڈو XXX XXX
آلو
>دہلی XXX XXX
>مہاراشٹر XXX XXX
>مغربی بنگال XXX XXX
>تمل ناڈو XXX XXX
ٹماٹر
>دہلی XXX XXX
>مہاراشٹر XXX XXX
>مغربی بنگال XXX XXX
>تمل ناڈو XXX XXX
اجرت کی شرحیں

روز اول ہی سے دن میں آٹھ گھنٹہ کام کے جساب سے طے کی جاتی ہیں ۔ ان کو 20 منتخب ریاستوں میں سے ہرایک کے لیے تیار کیا گیا ہے۔ پورے ہندوستان کے لئے اجرت کی اوسط شرحیں ان 20 ریاستوں کی مجموعی اجرتوں کوکوٹیشن کی تعداد سے تقسیم کرکے نکالی جاتی ہیں۔ روزانہ اجرت کی اوسط شرح کا ڈیٹا زرعی اورغیر زرعی پیشوں کے جمع کردہ ڈیٹا پر مبنی ہوتا ہے -

عام زرعی مزدوروں کے لئے اوسط روزانہ اجرت کی شرح
>عورتیں XXX XXX
عام غیر زرعی مزدوروں کے لئے اوسط روزانہ اجرت کی شرح
>عورتیں XXX XXX
سماجی اسکیمیں

وہ اسکیمیں ہیں جو حکومتی اکائیوں کے ذریعےنافذ اور کنٹرول کی جاتی ہیں تاکہ کمیونٹی کے ممبران کو مجموعی طور پر یا کمیونٹی کے مخصوص طبقوں کو سماجی فوائد فراہم کیے جائیں۔

پردھان منتری جان - دھن یوجنا (پی ایم جے ڈی وائی)
>اکاؤنٹس میں جمع XXX XXX
>روپے ڈیبٹ کارڈ جاری کیا گیا۔ XXX XXX
پردھان منتری تحفظ بیما یوجنا (پی ایم ایس بی وائی)
>کل اندراجات XXX XXX
>دعوے ادا کیے گئے۔ XXX XXX
پردھان منتری جیون جیوتی بیمہ یوجنا (پی ایم جے جے بی وائی)
>کل اندراجات XXX XXX
>دعوے ادا کیے گئے۔ XXX XXX
پردھان منتری مدرا یوجنا (پی ایم ایم وائی)
>منظور شدہ رقم XXX XXX
>قرض لینے والوں کی کل تعداد XXX XXX
>شیشو XXX XXX
>کشور XXX XXX
>تارون XXX XXX
>مدرا کارڈ جاری کیا گیا۔ XXX XXX
اسٹینڈ اپ انڈیا اسکیم
>ایس سی کاروباری حضرات XXX XXX
>ایس ٹی انٹرپرینیورز XXX XXX
>خواتین کاروباری افراد XXX XXX
>کل XXX XXX
آیوشمان بھارت - پردھان منتری جن آروگیہ یوجنا (پی ایم جے اے وائی)
>ہسپتالوں کی فہرست XXX XXX
>فائدہ اٹھانے والوں کو داخل کیا گیا۔ XXX XXX
>ای کارڈز جاری XXX XXX
پردھان منتری اجولا یوجنا (پی ایم یو وائی)
>ایل پی جی کنکشن جاری XXX XXX
یو جے اے ایل اے اسکیم
>ایل ای ڈی تقسیم کی گئی۔ XXX XXX
>ٹیوب لائٹس تقسیم کی گئیں۔ XXX XXX
>پنکھے تقسیم کیے گئے۔ XXX XXX
دیگر فلاحی اسکیموں کے تحت پیش رفت
>پنشنرز جیون پرمان سے مستفید ہوئے۔ XXX XXX
>انڈیا پوسٹ پیمنٹس بینک کے تحت ڈور سٹیپ بینکنگ سروس فراہم کرنے والے XXX XXX
>پی ایم بھارتیہ جن اوشدھی پریوجنا مرکز XXX XXX
>سوائل ہیلتھ کارڈز بھیجے گئے۔ XXX XXX
>ڈیجی لاکر کے ذریعے جاری کردہ دستاویزات XXX XXX
>پی ایم شرم یوگی مان دھن یوجنا کے تحت اندراج شدہ لوگ XXX XXX
>پی ایم فصل بیمہ یوجنا کے تحت رجسٹرڈ کسان XXX XXX
>ڈی ڈی یو-جی کے وائی کے تحت تربیت یافتہ افراد XXX XXX
>پی ایم گرام سڑک یوجنا کے تحت منظور شدہ سڑک کی لمبائی XXX XXX
>پی ایم آواس یوجنا کے تحت مکانات مکمل XXX XXX
>سوچھ بھارت کے تحت بنائے گئے گھریلو بیت الخلاء XXX XXX
>سوبھاگیہ کے تحت گھرانوں کو بجلی فراہم کی گئی۔ XXX XXX
>مشن اندر دھنش کے تحت بچوں کو ٹیکے لگائے گئے۔ XXX XXX
>اٹل پنشن یوجنا کے تحت سبسکرائبرز XXX XXX
>پی ایم کسان سمان ندھی یوجنا کے تحت مستفیدین XXX XXX
کوویڈ -19

ایک موجودہ عالمی وبائی بیماری ہے، جو SARS-CoV-2 وائرس کے کسی متاثرہ شخص کے منہ یا ناک سے چھوٹے ذرات کی شکل میں اس وقت پھیلتی ہے جب وہ کھانستے، چھینکتے، بولتے یا سانس لیتے ہیں۔ کوویڈ -19ویکسین سنگین بیماری، ہسپتال میں داخل ہونے، اور کورونا وائرس سے ہونے والی اموات کے خلاف مضبوط تحفظ فراہم کرتی ہیں۔

Covid-19 کیسز
>مصدقہ کیسز XXX XXX
>فعال کیسز XXX XXX
>بازیافت XXX XXX
>شرح اصولی XXX XXX
>اموات XXX XXX
>شرح اموات XXX XXX
عمر کے گروپوں کے ذریعہ ویکسینیشن
>12-14 سال (پہلی خوراک) XXX XXX
>12-14 سال (دوسری خوراک) XXX XXX
>15-18 سال (پہلی خوراک) XXX XXX
>15-18 سال (دوسری خوراک) XXX XXX
>18 سے 59 سال (احتیاطی خوراک) XXX XXX
>18 سال سے زیادہ (پہلی خوراک) XXX XXX
>18 سال سے زیادہ (دوسری خوراک) XXX XXX
>کل ویکسین شدہ XXX XXX

×
Fill the details